زرداری احتساب عدالت میں پیش، سیکورٹی کے سخت انتظامات

حتساب عدالت کے جج ارشد ملک جعلی بینک اکاونٹ کیس میں سماعت کریں گے.

سابق صدر آصف زرداری، فریال تالپور احتساب عدالت میں پیش ہو گئے. احتساب عدالت کے جج ارشد ملک جعلی بینک اکاونٹ کیس میں سماعت کریں گے.

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق آصف زرداری اور فریال تالپور اسلام آباد کی عدالت میں پیش ہو گئے ہیں. احتساب عدالت نے آج آصف زرداری، ان کی ہمشیرہ فریال تالپور، حسین لوائی، انور مجید، عبدالغنی مجید، عدیل شاہ راشدی اور اقبال آرائیں سمیت 30 ملزمان کو بھی طلب کیا ہوا تھا. گزشتہ سماعت میں جعلی اکائونٹس کیس میں دو خواتین نے گواہی دینے کی درخواست تھی جو خود اس کیس میں ملزم ہیں.

احتساب عدالت کے اطراف سیکیورٹی ہائی الرٹ کردی گئی .فیڈرل جوڈیشل کمپلیکس کے اندر اور باہر پولیس کی بھاری نفری تعینات ہے .احتساب عدالت کے باہر پولیس کے 1500 جوان تعینات ہیں .کسی بھی ناخوشگوار صورتحال سے نمٹنے کیلیے رینجرز کے200جوان وافسران بھی تعینات کئے گئے ہیں کسی بھی غیرمتعلقہ شخص کو احتساب عدالت کے احاطے میں آنے کی اجازت نہیں ہے .

واضح رہے کہ آصف زرداری 8 اپریل کو احتساب عدالت میں پیش ہوئے تھے اور سماعت کے دوران کرن اور نورین نامی 2 ملزم خواتین نے عدالت سے گواہ بننے کی درخواست کی تھی۔عدالت نے دونوں خواتین سے استفسار کیا تھا کہ وہ وعدہ معاف گواہ بننا چاہتی ہیں؟ جس کے بعد عدالت نے دونوں خواتین کو تحریری درخواستیں دینے کی ہدایت کی تھی .منی لانڈنگ کیس 2015 میں پہلی دفعہ اسٹیٹ بینک کی جانب سے اُس وقت اٹھایا گیا، جب مرکزی بینک کی جانب سے وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کو مشکوک ترسیلات کی رپورٹ یعنی ایس ٹی آرز بھیجی گئیں۔ایف آئی اے نے ایک اکاؤنٹ سے مشکوک منتقلی کا مقدمہ درج کیا جس کے بعد کئی جعلی اکاؤنٹس سامنے آئے جن سے مشکوک منتقلیاں کی گئیں۔معاملہ سپریم کورٹ تک پہنچا تو اعلیٰ عدالت نے اس کی تحقیقات کے لیے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم ( جے آئی ٹی) تشکیل دی جس نے گزشتہ برس 24 دسمبر کو عدالت عظمیٰ میں اپنی رپورٹ جمع کرائی جس میں 172 افراد کے نام سامنے آئے۔جے آئی ٹی نے سابق صدر آصف علی زرداری اور اومنی گروپ کو جعلی اکاؤنٹس کے ذریعے فوائد حاصل کرنے کا ذمہ دار قرار دیا .سپریم کورٹ نے 7 جنوری 2019 کو اپنے فیصلے میں نیب کو حکم دیا کہ وہ جعلی اکاؤنٹس کی از سر نو تفتیش کرے اور 2 ماہ میں مکمل رپورٹ پیش کرے جب کہ عدالت نے جے آئی ٹی رپورٹ بھی نیب کو بجھجوانے کا حکم دیا۔اعلیٰ عدالت نے حکم دیا کہ تفتیش کے بعد اگر کوئی کیس بنتا ہے تو بنایا جائے۔

Comments
Loading...