کراچی میں پانی پر جھگڑا ہو سکتا ہے، 27 اپریل کو جلسہ کریں‌ گے، ایم کیو ایم

ایم کیو ایم کے رہنما خالد مقبول نے کہا ہے کہ 27 اپریل کو باغ جناح میں جلسہ کریں گے، نیب سندھ میں ہونے والی کرپشن کی تحقیقات کرے،

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ایم کیوایم پاکستان کے رہنما خالد مقبول صدیقی نے ایم کیو ایم کےعارضی مرکز میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پیپلزپارٹی کےرویوں نےسندھ کی تقسیم کی .سندھ میں بحرانی ایمرجنسی کی کیفیت ہے .صوبائی خودمختاری کےنام پرعام آدمی سےوسائل چھین لیےگئے .اندرون سندھ میں میرٹ کوپامال کیاجارہاہے .انہون نے کہا کہ کراچی کے شدید بحران کا شکار ہے پانی کے نام پر کراچی میں جھگڑے ہوسکتے ہیں .وزیراعظم پاکستان کراچی کے معاملات میں اپنے آئینی اختیارات استعمال کریں .کراچی اور حیدرآباد کے نوجوانوں کو نوکریاں دی جائیں .کراچی میں ایسے ڈومیسائل بنائے جارہے جنکا شناختی کارڈ اندرون سندھ کا بنا ہے .پاکستان ہماری پہلی اور اخری چوائس ہے .شہری علاقوں کو پچاس سال لوٹ کر بھی دیہی علاقوں کو آباد نہیں کیا گیا .اگر کوئی سمجھتا ہے کہ طاقت کے ذریعے ایم کیوایم کو دبالے گا تو جلد ان کی غلط فہمی دور ہوجایے گی .پبلک سروس کمیشن کے افسر نوکریاں اپنے بچوں میں ہی تقسیم کررہے .سندھ کے شہری علاقوں کی آبادی چارکروڑ سے زیادہ ہے .وفاقی حکومت کے ذمہ داری ہے کہ صوبوں میں ہونے والی نا انصافی کےخلاف اقدامات کرے .ارٹیکل149 آئین کا حصہ اور استعمال کرنے کیلئے ہے .اٹھارویں ترمیم میں ایم کیوایم اور عوام سے دھوکہ کیا گیا .صوبوں کے وسائل کو فوری چور پر نچلی سطح پر منتقل کیے جائیں .صوبائی خودمختاری کے نام ہر عام عوام کے وسائل چھین لیے گئے .کراچی بہت تیزی سے پانی مسائل اور دیگرمشکلات کا شکار ہوتا جارہا ہے.کراچی میں تعینات کمشنر ڈپٹی کشمنر آئی جی ڈی آئی جیز ودیگر افسران کا تعلق صرف اندرون سندھ یادیگر صوبوں سے ہیں .کوٹہ سسٹم کے نام پر سندھ کے شہری علاقوں میں نفرت پیدا ہورہی ہے .

Comments
Loading...