نو مسلم بہنوں‌ کے بارے اسلام آباد ہائیکورٹ نے حکم دے دیا

لڑکیوں کو ڈپٹی کمشنر کے حوالے کر کے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کو گارڈین مقرر کردیا

اسلام آباد ہائیکورٹ نے دو نو مسلم بہنوں‌کو سرکاری تحویل میں‌ڈپٹی کمشنر کے حوالے کرنے کا حکم دے دیا.

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کیس کی سماعت کی. دونوں نو مسلم بہنیں اپنے وکلاء کے ہمراہ پیش ہوئیں. جس دوران چیف جسٹس نے ڈپٹی کمشنر اسلام آباد کو روسٹرم پر طلب کیا ۔چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس جاری کرتے ہوئے کہا کہ یہ حساس معاملہ ہے جس سے پاکستان کا تشخص جڑا ہے ، نبی پاک ﷺ کے فتح مکہ اور حطبہ حجتہ الوداع پر دو خطاب ہیں اور دونوں خطاب اقلیتوں سے متعلق قانون و آئین کی حیثیت رکھتے ہیں ۔

لڑکیوں کو ڈپٹی کمشنر کے حوالے کر کے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کو گارڈین مقرر کردیا ۔ عدالت عالیہ نے چیف سیکریٹری سندھ اور دیگر فریقین سے آئندہ سماعت پر رپورٹ طلب کر لی ہے ۔
جسٹس اظہر من اللہ نے حکم جاری کرتے ہوئے کہاکہ لڑکیوں کو شیلٹر ہوم یا دیگر جگہوں پر رکھا جا سکتا ہے اور ایس پی لیول کی افسر بچیوں کی حفاظت کیلئے تعینات کی جائے . سماعت آئندہ منگل تک ملتوی کر دی گئی.

Comments
Loading...