کراچی 17 لاپتہ بچوں کو بازیاب کرانے کا عدالتی حکم

سندھ ہائیکورٹ میں پولیس نے 4 سال قبل لاپتہ ہونے والے بچے کو عدالت میں پیش کر دیا

کراچی کے مختلف علاقوں سے 18 بچے لاپتہ ہونے پر عدالت نے آئی جی سندھ کو بے بازیاب کروانے کا حکم دیا ہے.

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سندھ ہائیکورٹ میں پولیس نے 4 سال قبل لاپتہ ہونے والے بچے کو عدالت میں پیش کر دیا .ڈی آئی جی سی آئی اے نے عدالت میں بیان دیتے ہوئےکہا کہ حسنین 2سال ہندو فیملی کےساتھ مقیم تھا،حسنین کو بعد میں پولیس افسرنے2سال اپنےپاس رکھا .بچے کے والد نے بیان دیا کہ حسنین کو سوتیلی ماں نےماراپیٹا تھا،وہ ناراض ہوکرچلاگیا،جس پر عدالت نے والد سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ لگتا ہےآپ کو پولیس پٹی پڑھاکرلائی ہےاورآپ وہی باتیں کررہےہیں،بچہ خودواپس آگیا ہےتوپولیس اس کاکریڈٹ کیوں لے رہی ہے ؟،جسٹس نعمت اللہ پھلپھوٹو نے کہا کہ عدالت پولیس کی کارکردگی سے بہت مایوس ہے،اتنی بڑی تعدادمیں بچےلاپتاہیں اورپولیس کی کارکردگی صفرہے،بچے کی گمشدگی کامقدمہ درج کرکےاصل کہانی کی تحقیقات کریں،عدالت نے مزید17 لاپتابچوں کوبازیاب کرانےکاحکم دے دیا

Comments
Loading...