ایک کروڑ ملازمتیں دینےوالوں نے 9لاکھ نوجوان بے روزگار کردیئے

اظہر اقبال احسن ڈپٹی جنرل سیکرٹری جماعت اسلامی پاکستان نےکہاہےکہ جنوبی پنجاب سے بڑے بڑے عہدوں پر فائز رہنے والوں نے اس کی پسماندگی دور کرنے کے لیے کچھ نہیں کیا ۔ موجودہ حکومت میں بھی جنوبی پنجاب کے سیاستدان اعلیٰ ترین عہدوں پر موجودہیں مگر جنوبی پنجاب کے عوام کو تعلیم ، صحت اور روزگار کی سہولت میسر ہے نہ پینے کے لیے صاف پانی دستیاب ہے ۔ سابقہ حکومتوں کی طرح پی ٹی آئی حکومت بھی محض نعروں اور وعدوں سے عوام کو بہلا رہی ہے ۔ حکومت نے صوبہ بہاولپور اور صوبہ جنوبی پنجاب کے لیے کچھ نہیں کیا ۔ استحصالی نظام کی وجہ سے جنوبی پنجاب کے عوام کی اکثریت خط غربت سے نیچے زندگی گزارنے پر مجبور ہے ۔ حکمران عوام کو سبز باغ دکھا رہے ہیں جس سے امیدیں مایوسی میں بد ل رہی ہیں ۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے مظفرگڑھ میں ضلعی ٹیم سے ملاقات کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہاکہ موجودہ حکومت نے آئی ایم ایف سے قرضہ لینے سے پہلے ہی ٹیکسوں اور مہنگائی میں اضافہ کر دیاہے ۔ ماہرین معیشت کہتے ہیں کہ جون میں ڈالر 150 روپے کا ہو جائے گا ۔ فی کس آمدنی میں ساڑھے سات فیصد تک کمی ہوگی اور مزید نو لاکھ نوجوان بے روزگاری کی چکی میں پس جائیں گے ۔ انہوںنے کہاکہ 2021 ءتک بے روزگار نوجوانوں میں مزید بارہ لاکھ کا اضافہ ہوگا ۔ ان مخدوش حالات میں ایک کروڑ ملازمتوں اور پچاس لاکھ گھروں کا دعویٰ مضحکہ خیز اور دیوانے کے خواب سے زیادہ اہمیت نہیں رکھتا ۔جماعت اسلامی پاکستان ماہ اپریل میں 50لاکھ گھرانوں تک پہنچنے کا ہدف پورا کر لے گی۔موجودہ حکومت نے ساڑھے آٹھ ماہ میں عوام کو مہنگائی بے روزگاری کے علاوہ کجھ نہیں دیا۔

Comments
Loading...