آج کی بات باغی کے ساتھ !!!

ترک پاک اور موجودہ صورت حال ۔

ترکش ایئر فورس کی جانب سے لگائی جانے والی پوسٹ ۔ بھارتیوں کو یہ نہیں بھولنا چاہیے کہ ہم (پاکستان اور ترکی) دو ممالک سے ذیادہ بھی کوئی رشتہ رکھتے ہیں ۔ ہم تحریک آذادی کشمیر کے پلیٹ فارم سے ترکش ائیر فورس کے بیان کو سراہتے ھیں۔ترکی نے ہر حال میں پاکستان کے ساتھ کھڑے رہنے کا اعلان کر دیا۔ ترکی کے وزیر خارجہ میولود چاوش اولو نے کہا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان پیدا ہونے والی کشیدگی پر انہیں خدشات لاحق ہیں اور ترکی ان مسائل کو حل کرنے میں مدد گار ہونے کے لئے تیار ہیں۔نا صرف پاکستان بھارت کےدرمیان موجود مسائل کو مذاکرات کے ذریعے حل کرنے کے لئے ترکی ہر طرح کا تعاون فراہم کرنے کے لئے تیار ہے بلک جارحیت کی صورت ھوی تو پاکستان کے ساتھ ھیں ۔یاد رہے کہ تاریکی میں حملےکا دن کےاجالے میں جواب دیتے ہوئے پاکستان نے بھارت کو پہلا سرپرائز دیتے ہوئے 2 انڈین طیارے مار گرائے، ایک طیارے کا ملبہ بھارتی حدود جبکہ دوسرے کا ملبہ پاکستانی حدود میں گرا، 2 پائلٹ بھی ہلاک ہوگئے۔ ایک پائلٹ کو گرفتار کر لیا گیا۔دفتر خارجہ نے حملے کی تصدیق کی اور کہا یہ کارروائی بھارتی جنگی جنون کا ردعمل نہیں تھا، پاکستان نے غیر فوجی اہداف کو نشانہ بنایا، کارووائی کا مقصد اپنے تحفظ کے حق اور حاصل صلاحیتوں کا مظاہرہ کرنا تھا، پاکستان حالات مزید بگاڑنا نہیں چاہتا، پاکستان کو مجبور کیا گیا تو جواب دینے کے لیے پوری طرح تیار ہیں، یہی وجہ ہے کہ پاکستان نے دن کی روشنی میں اور پیشگی دھمکی کے بعد کارووائی کی۔دوسری جانب پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ بھارت کو جواب دینا ہماری مجبوری بن گئی تھی، بھارت کو آج یہ بتا دیا کہ ہمارے پاس پوری صلاحیت موجود ہے، یہ سوچنا ضروری ہے کہ ہمیں اس سے آگے کہاں جانا ہے، دنیا میں جہاں بھی جنگیں ہوئیں ان کے خاتمے کا کسی نے نہیں سوچا۔عالم اسلام اک مرتبا پھر اکھٹے ھے ترکی سب سے پھلے پاکستان کے ساتھ کھڑا اے ۔

 

Comments
Loading...